کے پی کے گیارہویں کلاس اردو نظم نمبر 3 شہر آشوب مختصر سوال جواب

KPK 11th Class Urdu Nazm 3 Shehr e Aashob Short Questions with answers are combined for all 11th class(Intermediate/hssc) Level students.Here You can prepare all Urdu Nazm 3 Shehr e Aashob short question in unique way and also attempt quiz related to this Nazm. Just Click on Short Question and below Answer automatically shown. After each question you can give like/dislike to tell other students how its useful for each.

Class/Subject: 11th Class Urdu

Nazm Name: Shehr e Aashob

Board: All KPK  Boards

  • Malakand Board 11th Class Urdu Nazm 3 Shehr e Aashob short questions Answer
  • Mardan Board 11th Class Urdu Nazm 3 Shehr e Aashob short questions Answer
  • Peshawar Board 11th Class Urdu Nazm 3 Shehr e Aashob short questions Answer
  • Swat Board 11th Class Urdu Nazm 3 Shehr e Aashob short questions Answer
  • Dera Ismail Khan Board 11th Class Urdu Nazm 3 Shehr e Aashob short questions Answer
  • Kohat Board 11th Class Urdu Nazm 3 Shehr e Aashob short questions Answer
  • Abbottabad  Board 11th Class Urdu Nazm 3 Shehr e Aashob short questions Answer
  • Bannu Board 11th Class Urdu Nazm 3 Shehr e Aashob short questions Answer

Helpful For:

  • All KPK Boards 11th Class  Urdu Annual Examination
  • Schools 11th Class Urdu December Test
  • KPK 11th Class Urdu Test
  • Entry Test questions related Urdu

کے پی کے گیارہویں کلاس اردو نظم نمبر 3 شہر آشوب مختصر سوال جواب

اس نظم کا مرکزی خیال اپنے لفظوں میں لکھیں۔

ج۔ اس مخمس کا مرکزی خیال یہ ہے کہ اگر ہ جو کبھی ایک خوشحال شہر تھا، سیاسی انقلاب کے نتیجے میں لوٹ مار اور قتل و غارت کا باز گرم رہا ہے۔ اس لیے مصائب اور آدات میں گھر ا ہوا ہے۔ لوگ بیروزگار ہیں اور سب کا روبار ٹھپ ہیں۔ مدلسی کا دور دورہ ہے۔ اچھے اچھے لوگ بھیک مانگنے پر مجبور ہیں۔ خدا اسے حالات کی بہتری کی استدعا کی گئی ہے۔

اس نظم میں جن پیشوں کا ذکر کیا گیا ہے، ان کی وضاحت کریں۔

ج۔ اس نظم میں مندرجہ ذیل پیشوں کا ذکر کیا گیا ہے۔
۱) صراف: سونے یا چاندی کا کاروبارکرنے والا۔
۲) جوہری: ہیرے جوہرااور قیمتی پتھروں کا بیواری۔
۳) ساہوکار: مہاجن؛ روپے پیسے کا کاروبار کرنے والا؛ سود پر روپیہ دینے والا۔
۴) دکانندار: دکان لگا کر کسی بھی قسم کا سودا بیچنے والا۔
۵) فقیر: پیشہ و ربھکاری

شہر آشوب کی تعریف کریں۔کسی اور شاعر کی شہر آشوب کے چند اشعار لکھیں۔

ج۔ شہر آشوب ا س طویل نظم کو کہتے ہیں۔ جس میں ان تکلیفوں اور مصیبتوں کا بیان ہو جو سیاسی انقلاب کے باعث کسی شہر پر نازل ہوئی ہوں۔
شاکر، ناجی، میر، سودا، داغ، سالک وغیرہ نے شہر آشوب کہے ہیں۔ کسی ایک سے تین چار اشعار لے لیں۔ داغ کا ایک شعر۔
ملی ہیں خاک میں شکلیں جو ماہتاب کی تھیں
کھنچی ہیں کانٹوں میں، جو پتیاں گلاب کی تیں

Toggle Title

ج۔ “پھر مانگو” سے مراد ہے کہ دوبارہ بھیک مانگنے کی آواز لگاؤ تو ہمیں شرمندہ کرنے کے سوا اور کیا مقڈر ہوگا۔

شاعر نے گھر کی مفلسی کا کیا نقشہ کھینچا ہے؟

ج۔ شاعر نے گھر کی مفلسی کا مقشہ کچھ اس طرح کھینچا ہے کہ غریب آدمی کے گھر کی چھت کر گئی، نئی چھت ڈالو انے کے لیے اس کے پاس پیسے ہیں۔ دیواروں کا پلستر اور ٹیپ اکھڑ گئے ہیں، دروازہ شکستہ حالت میں اور رنگ روغن کے بغیر ہیں۔ گویا مکان کیا ہے ایک کھنڈر ہے۔

یہ نظم کس ہیئت میں ہے؟ وضاحت کریں۔

ج۔ یہ نظم مخمس کی ہیئت میں ہے۔ مخمس اس نظم کو کہتے ہیں جس میں ہر بند پانچ مصرعوں پر مشتمل ہو۔ ہر بند کے پہلے چار مصرعے ہم قا فیہ ہوتے ہیں اور پانچواں مصر ع ہر بند کے پانچواں مصرع کے ساتھ ہم قافیہ ہوتا ہے۔

You Can Learn and Gain more Knowledge through our Online Quiz and Testing system Just Search your desired Preparation subject at Gotest.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
error: